Header Ads Widget

Responsive Advertisement

آم کے فوائد



 دنیا میں سب کچھ انسان کے فائدے کے لیے بنائی گئی ہے اور اگر بات کی جائے پھلوں کے بادشاہ آم کی تو فوائد کے لحاظ سے بھی اگر آم کو بادشاہ کہا جائے تو غلط نہ ہوگا۔پھلوں میں آم کو پھلوں کا بادشاہ کہا جاتا ہے کیونکہ کہ آم اپنے ذائقے اور فوائد کی وجہ سے اس کا کوئی ثانی نہیں۔

آم کی کاشت



آم عام طور پر ریتلی اور زرخیز زمین میں کاشت ہوتا ہے۔انڈیا اور پاکستان میں آم کی کاشت وسیع پیمانے پر ہوتی ہے اور آم کو انڈیا اور پاکستان میں بہت شوق سے کھاتے ہیں۔ آم انڈیا کا قومی پھل ہے اور اسے بہت سے تہواروں میں استعمال کیا جاتا ہے۔ آم کے پتے بھی مختلف تہواروں میں سجاوٹ کے طور پر استعمال ہوتے ہیں۔ آم کی جون سے اگست تک رہتا ہے اور لوگ بہت شوق سے کھاتے ہیں۔

آم کا استعمال

ویسے تو آم کو شوق سے کاٹ کر کھایا جاتا ہے لیکن آم کا اچار، آم کا ملک شیک، آملی کا جوس بہت مشہور ہے۔



آم کے فوائد

اگر بات کی جائے آم کے فوائد کی تو آم کے فوائد کے لحاظ سے بھی آم کا کوئی ثانی نہیں۔ آم کے لاتعداد فوائد ہیں جن میں چند ایک کا ذکر کریں گے،

خون پیدا کرتا ہے

آم کی بہت سی خوبیوں میں سے ایک یہ بھی ہے کہ آم کو خون پیدا کرنے کی مشین کہا جاتا ہے۔اگر روزانہ ایک ام کھایا جائے تو خون کی کمی دور ہو جاتی ہے۔ اور اگر روزانہ ایک گلاس میں ایک آم ڈال کر اس کا ملک شیک بنا کر پیا جائے تو اس سے خون کی کمی دور ہو جاتی ہے۔

وزن بڑھتا ہے

آم کو وزن بڑھانے کے لیے بھی استعمال کیا جاتا ہے اور اسے بہت مفید سمجھا جاتا ہے۔ کمزور افراد کے لیے آم بہت مفید ہے کیونکہ وزن بڑھانے کے لیے آم ایک سستی اور آسان غذا ہے۔ ایک آم میں کیلوریز کی تعداد زیادہ ہوتی ہے جو کہ انسانی جسم کے وزن بڑھانے میں مدد گار ثابت ہوتی ہے۔ اور یہ کیلوریز آسانی سے جذب ہو جاتی ہیں۔


نظام ہاضمہ کےلئے مفید

آم نظام ہاضمہ کےلئے مفید اور موثر ہے۔ آم نظام ہاضمہ کو درست کرتا ہے۔ بھوک کو بڑھاتا ہے۔اور آم میں موجود فائبر آنتوں کی صفائی کرنے میں مدد گار ثابت ہوتا ہے۔

جلد کے لئے مفید

آم جلد کے لئے بھی بہت مفید ہے۔اگر آم کا گودا چہرے پر لگایا جائے تو اس سے چہرہ صاف اور چمکدار ہو جاتاہے اور چہرے کی نمی بھی برقرار رہتی ہے۔



دماغ کے لیے مفید

آم دماغ کے لیے بھی مدد گار ثابت ہوتا ہے یعنی آم کے استعمال سے دماغ صحت مند ہوتا ہے۔ آم میں بہت مقدار میں وٹامنز پائے جاتے ہیں جو کہ دماغ کی نشوونما میں مددگار ثابت ہوتے ہیں۔اور  آم میں یاداشت تیز کی صلاحیت بھی موجود ہوتی ہے۔

ایک تبصرہ شائع کریں

0 تبصرے